Wed. Jun 19th, 2024

اسلام آباد: وفاقی کابینہ کا اجلاس جمعہ کو بجٹ تجاویز کا جائزہ لینے کے لیے ہوا اور بجٹ 2023 میں وفاقی سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں ایڈہاک بنیادوں پر 15 فیصد اضافے کی منظوری دی گئی۔وزیر اعظم شہباز شریف کی زیر صدارت کابینہ کے اجلاس میں مالی سال 23-2022 کے بجٹ کی منظوری دی گئی۔ کابینہ کی منظوری کے بعد وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل آج بجٹ قومی اسمبلی میں پیش کریں گے۔اجلاس اپنے مقررہ وقت سے ایک گھنٹہ کی تاخیر سے دوپہر 12 بجے وزیراعظم ہاؤس میں ہوا۔ وزیر مفتاح نے کابینہ کو بجٹ پر بریفنگ دی۔وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے ٹویٹر پر کہا: “وزیراعظم نے وزارت خزانہ کی 10 فیصد اضافے کی تجویز کو مسترد کر دیا ہے اور کابینہ کی رضامندی سے سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 15 فیصد اضافے کی منظوری دے دی ہے۔”انہوں نے مزید کہا کہ ایڈہاک الاؤنسز کو بھی بنیادی تنخواہ میں ضم کر دیا گیا ہے۔کابینہ کے اجلاس میں بجٹ میں تمام ریٹائرڈ سرکاری ملازمین کی پنشن میں 5 فیصد اضافے کی تجویز بھی پیش کی گئی۔اس معاملے کی رازداری کے ذرائع نے بتایا کہ سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں حالیہ اضافے سے قومی خزانے پر 71.59 ارب روپے کا بوجھ پڑے گا۔